تنخواہوں میں اضافے کا معاملہ: وزیراعظم نے گورنر پنجاب کو بل پر دستخط کرنے سے روک دیا

لاہور (اے ٹی ایم نیوز آن لائن) ارکان پنجاب اسمبلی کی تنخواہوں میں اضافہ مؤخر کر دیا گیا، وزیراعظم عمران خان نے گورنر پنجاب چوہدری سرور کو بل پر فوری دستخط کرنے سے روک دیا۔

تفصیلات کیمطابق گورنر پنجاب نے بل پر دستخط کرنے سے پہلے وزیراعظم سے مشاورت کا فیصلہ کیا تھا۔ نجی خبر رساں ادارے 92 نیوز کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے گورنر پنجاب چوہدری سرور کو تنخواہوں میں اضافے کے بل پر دستخط کرنے سے روکنے کے ساتھ ساتھ بل پر نظرثانی کیلئے بل کو دوبارہ ایوان میں لانے کی بھی ہدایت کی ہے.

وزیراعظم نے کہا کہ وزیراعلیٰ کو تاحیات گھر دینے کا فیصلہ مناساب نہیں. مراعات کا دورانیہ زیادہ سے زیادہ 3 ماہ کرنے کی تجویز بھی دی گئی ہے.

یاد رہے گزشتہ روز ارکان اسمبلی کی تنخواہوں میں اضافے کا بل پنجاب اسمبلی نے منظور کیا تھا جس کے تحت اراکین اسمبلی کی تنخواہ اورمراعات 83 ہزار ماہانہ سے بڑھا کر 2 لاکھ روپے تک کر دی گئی، ارکان اسمبلی کی بنیادی تنخواہ 18 ہزار روپے سے بڑھ کر 80 روپے ماہانہ ہو گئی۔ ڈیلی الاؤنس 1 ہزار سے بڑھ کر 4 ہزار، ہاؤس رینٹ 29 ہزار سے بڑھا کر 50 ہزار روپے کر دیا گیا۔

اسی طرح یوٹیلیٹی الاؤنس 6 ہزار سے بڑھا کر 20 ہزار، مہمانداری کا ماہانہ الاونس 10 ہزار سے بڑھا کر 20 ہزار روپے کر دیا گیا، اس وقت ارکان اسمبلی کو 83 ہزار روپے ماہانہ تنخواہ اور مراعات مل رہی ہیں، نئے بل کی منظوری کے بعد ارکان اسمبلی کو ایک لاکھ 92 ہزار روپے تنخواہ اور مراعات ملیں گی۔

واضح رہے، بل پاس ہونے کے بعد وزیراعظم عمران خان کی جانب سے ٹوئٹر پیغام میں بل کی منظوری پر مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ پاکستان اگر خوشحال ہوتا تو یہ کرنا مناسب تھا لیکن اب چونکہ پاکستان ایک مشکل وقت سے گزر رہا ہے ان حالات میں ایسا فیصلہ بلاجواز ہے.

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے