کرتارپورراہداری پراجلاس میں جانا مثبت ہمسائیگی کی طرف قدم ہے ، پاکستان

اسلام آباد(اے ٹی ایم نیوز آن لائن) ترجمان دفترخارجہ ڈاکٹرفیصل کا کہنا ہے کہ کرتارپورراہداری پر مذاکرات کے لیے بھارت جارہے ہیں اور امید ہے کہ بھارت بھی قدم آگے بڑھائے گا۔

ترجمان دفترخارجہ ڈاکٹرفیصل نے واہگہ بارڈرپرمیڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ پاکستان نے کرتارپور کھولنے کا فیصلہ کیا ہے، کرتارپور راہداری پر مذاکرات کے لیے بھارت جارہے ہیں اوریہ میٹنگ کرتارپورراہداری کھولنے سے متعلق ہی ہے۔ ہماری سوچ ہےکہ ایک شجر ایسا لگایا جائے کہ ہمسائےکےگھر میں سایہ جائے۔

ترجمان دفترخارجہ ڈاکٹرفیصل نے کہا کہ منصوبے کا سنگ بنیاد 20 نومبر 2018 کو رکھا گیا جس کی تکمیل نومبر2019 میں ہوجائےگی، کرتارپورراہداری سے سکھ برادری کوسہولت اوردونوں ملکوں کے درمیان امن بھی ہوگا، بابا گورونانک دیو جی کا مزارسکھ برادری کیلیے اہمیت کا حامل ہے اورپاکستان اقلیتوں کے حقوق کا ہمیشہ علمبرداررہا ہے۔

دوسری جانب بھارتی درخواست پرآج اٹاری میں کرتارپور راہداری سے متعلق اجلاس ہوگا جس کے لیے پاکستان کا 18 رکنی وفد واہگہ کے راستے بھارت روانہ ہوگیا ہے۔ پاکستانی وفد جامع، تکینکی اورسول افراد کی نمائندگی ہے۔

اس سے قبل میڈیا سے گفتگو میں ڈاکٹر فیصل نے کہا کہ ہم مذاکرات مثبت پیغام کےساتھ جارہے ہیں، امید ہے بھارت بھی قدم آگے بڑھائے گا، ہماراکرتارپورراہداری پراجلاس میں جانا مثبت ہمسائیگی کی طرف قدم ہے، پاکستان آج کی ملاقات کرتارپورراہداری پرملاقاتوں کا پہلا سلسلہ ہوگی اور دفترخارجہ کرتارپورراہداری پراجلاس وزیراعظم کے وژن کاعکاس ہے۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے