سندھ اسمبلی پر حملہ افسوسناک، نیب کا قانون کالا، جیل کی دھمکیوں سے نہیں ڈرتے، بلاول بھٹو

کراچی (اے ٹی ایم نیوز آن لائن) چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ ہم آپ کی جیل کی دھمکیوں سے نہیں ڈرتے،سڑکوں پر نکلنے اور لانگ مارچ کیلئے تیار ہوں ،ہم احتجاج سمیت بہت سےآپشن اپنے پاس رکھتے ہیں، جمہوریت کو احتساب سےکوئی ڈرنہیں،میں اپنی سیاسی جدوجہد جاری رکھوں گا۔

اسپیکر سندھ اسمبلی سے ملاقات اور پارلیمانی پارٹی کے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بلاول بھٹو نے کہا کہ سندھ اسمبلی پرافسوس ناک حملہ کیاگیا ہے، اسپیکر سندھ اسمبلی پیپلز پارٹی کا عہدہ نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ سندھ اسمبلی پہلی اسمبلی ہے جس نے پاکستان کی قرارداد منظور کی، اس وقت کی اسمبلی میں بھی آغا سراج درانی کے رشتے دار تھے۔

انہوں نے کہا کہ مشرف کے بنائے گئے ادارے نے اسپیکر سندھ اسمبلی آغاسراج درانی کوبغیر کسی ثبوت اسلام آباد سے گرفتار کیا، گرفتاری کے بعد ثبوت تلاش کیے جارہے ہیں۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ جس طرح عورتوں اور بچوں کو یرغمال بنایا گیا اس کی مذمت کرتے ہیں،کسی بھی جمہوریت اور معاشرے میں ایسا نہیں ہوتا۔

چیئرمین پیپلز پارٹی کا کہنا تھا کہ نیب کو سیاسی انجینئرنگ کے لیے استعمال نہ کیا جائے ، نیب کا قانون کالا قانون ہے بے نظیر شہید نے کہا تھا یہ قانون ختم کرنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ جس طرح چادر اورچار دیواری کو پامال کیا گیا اس کی مذمت کرتے ہیں، چیئرمین نیب نے انسانی حقوق کی خلاف ورزی پر کوئی ایکشن نہیں لیا۔

بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ الیکشن کے دوران جعلی اکاؤنٹ کیس پر سوموٹو لینے کا مقصد کیا ہے؟، تفتیش کے معاملے پر سوموٹو نہیں لیا جاسکتا یہ انسانی حقوق کا کیس نہیں، شہید ذوالفقار بھٹو اور محترمہ بے نظیر بھٹو کیس کا سوموٹو کیوں نہیں؟

انہوں نے کہا کہ آرٹیکل 10 کےمطابق ہمیں فری ٹرائل کا حق ہے جو نہیں ملا،6 ماہ سے ہماری کردار کشی کی گئی،کسی کورٹ نےہمیں نوٹس نہیں دیااور سزا دے دی،کسی کوسنے بغیر سزا نہیں دی جاسکتی۔

بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ پوری قوم نے دیکھا کہ مجھے کیس میں گھسیٹا جارہا ہے ، عدالت نے پوچھا کس کے کہنے پر میرا نام جے آئی ٹی میں ڈالا گیا، اسکا جواب آج تک نہ ملا،چیف جسٹس نے کہا کہ بلاول بے گناہ ہے اس کا نام جے آئی ٹی سے ہٹایاجائے۔

ایک سوال کے جواب میں بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ نواز شریف کو سندھ میں علاج کی سہولت فراہم کرنا میرے لیے اعزاز ہوگا۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے