تھرڈ پارٹی ایپس کے ذریعے واٹس ایپ چلانے والے ہوشیار

لاہور(اے ٹی ایم نیوز آن لائن) واٹس ایپ دنیا کی مقبول ترین میسجنگ اپلیکشن ہے جس کے صارفین کی تعداد ڈیڑھ ارب سے زائد ہے اور پاکستان میں بھی اسے بہت زیادہ مقبولیت حاصل ہے۔

تاہم اگر آپ واٹس ایپ کے آفیشل کی بجائے تھرڈ پارٹی ورژن کو استعمال کرتے ہیں تو اس پلیٹ فارم میں آپ کے اکاﺅنٹ کو پابندی کا سامنا ہوسکتا ہے۔ یہ اعلان واٹس ایپ نے خود اپنے سوال جواب کے پیج پر کیا ہے۔

فیس بک کی زیرملکیت اپلیکشن کے مطابق ایسے افراد جو اس ایپ کے آفیشل کی بجائے تھرڈ پارٹی ورژن جیسے واٹس ایپ پلس اور جی بی واٹس ایپ استعمال کرتے ہیں، ان کے اکاﺅنٹ کو عارضی پابندی کا سامنا ہوسکتا ہے۔ کمپنی کے مطابق واٹس ایپ ان تھرڈ پارٹی ایپس کو سپورٹ نہیں کرتی کیونکہ ہم ان کی سیکیورٹی پالیسیوں کو درست قرار نہیں دے سکتے۔

یہ واضح نہیں کہ واٹس ایپ نے جب ایسے افراد پر پابندی لگانا شروع کی ہے جو اس طرح کی تھرڈ پارٹی ایپس کو استعمال کررہے ہیں۔ مگر ٹوئٹر اور ریڈیٹ میں لوگوں نے گزشتہ ہفتے اس بارے میں ایک دوسرے کو خبردار کرنا شروع کیا تھا۔

ان اکاﺅنٹس کو مستقبل پابندی کا سامنا نہیں ہوگا مگر صارفین کو آفیشل واٹس ایپ پر سوئچ ہونا ہوگا جس کے لیے اس تھرڈ پارٹی ایپ میں موجود اپنے چیٹ ڈیٹا کا بیک اپ بنانا ہوگا،جس کا طریقہ کار آپ اس لنک پر جاکر دیکھ سکتے ہیں۔

تھرڈ پارٹی ورژن سے بند ہونے والے اکاؤنٹس سے متعلق جاننے کے یہاں کلک کریں

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے