”میں تو اسلام پر ریسرچ کرنے آئی تھی“ منشیات سمگلنگ میں گرفتار ماڈل نے ’یوٹرن‘ لے کر ’بڑی لیڈر‘ ہونے کا ثبوت دیدیا

لاہور (اے ٹی ایم نیوز آن لائن) ہیروئن سمگلنگ کرنے کی کوشش میں گرفتار ہونے والی چیک ری پبلک کی خوبرو ماڈل ٹریسا کو پاکستان میں چند مہینے ہی گزرے ہیں مگر وہ بھی پاکستانی سیاستدانوں کے رنگ میں رنگ گئی ہیں کیونکہ انہوں نے بھی ’یوٹرن‘ لے لیا ہے اور کہا ہے کہ میں تو اسلام پر ریسرچ کرنے کیلئے پاکستان آئی تھی۔
21 سالہ ماڈل ٹریسا کو رواں سال جنوری میں متحدہ عرب امارات (یو اے ای) 9 کلو ہیروئن سمگل کرنے کی کوشش میں علامہ اقبال انٹرنیشنل ائیرپورٹ سے گرفتار کیا گیا تھا اور اس کے قبضے سے ڈیڑھ کروڑ روپے مالیت کی ہیروئن برآمد کی گئی تھی۔
ٹریسا ائیرپورٹ پر دو سیکیورٹی چیک پوائنٹ سے کامیابی سے گزرنے میں کامیاب ہو گئی تھی جس کے بعد اس کے سامان میں منشیات کا انکشاف ہونے پر اینٹی نارکوٹکس فورس (اے این ایف) نے اسے حراست میں لے لیا۔
دلچسپ امر یہ ہے کہ ملزمہ ٹریسا پاکستان میں چند مہینے گزار کر ہی بڑا ’لیڈر‘ بننا سیکھ گئی ہیں کیونکہ انہوں نے بھی اپنے بیان حلف سے ’یوٹرن‘ لے لیا ہے۔ ٹریسا نے اس سے قبل ہیروئن سمگل کرنے کا انکشاف کر لیا تھا تاہم وہ اپنے بیان سے مکر گئی ہے اور کہا ہے کہ میں تو اسلام پر ریسرچ کی کرنے کی غرض سے پاکستان آئی تھی۔
جیل میں ایک سال گزارنے کے بعد ٹریسا نے ’یوٹرن‘ لینا سیکھ لیا ہے اور یہی نہیں بلکہ انہوں نے پاکستانی ثقافت کو بھی اپنا لیا ہے کیونکہ وہ اب ناصرف روایتی لباس پہنتی ہیں بلکہ چادر بھی اوڑھنا شروع کر دی ہے۔ ٹریسا نے اپنے تازہ ترین بیان میں کہا ہے کہ وہ ماڈل اور اسلام پر ریسرچ کرنے کیلئے پاکستان آئی تھی لیکن کسٹم حکام نے مجھے آسان ہدف سمجھتے ہوئے ائیرپورٹ پر گرفتار کر لیا جبکہ میرے سامان سے کوئی منشیات بھی برآمد نہیں ہوئیں۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے